Verses

اتنا تو زندگی میں کسی کی خلل پڑے
ہنسنے سے ہو سکون نہ رونے سے کل پڑے

جس طرح ہنس رہا ہوں میں پی پی کے گرم اشک
یوں دوسرا ہنسے تو کلیجہ نکل پڑے

اِک تم کہ تم کو فکر نشیب و فراز ہے
اِک ہم کہ چل پڑے تو بہرحال چل پڑے

ساقی سبھی کو ہے غمِ تشنہ لبی مگر
مے ہے اسی کی نام پہ جس کے ابل پڑے

مدت کے بعد اس نے جو کی لطف کی نگاہ
جی خوش تو ہو گیا مگر آنسو نکل پڑے

Author

Theme by Danetsoft and Danang Probo Sayekti inspired by Maksimer