چُھونے سے قبل رنگ کے پیکر پگھل گئے

Verses

چُھونے سے قبل رنگ کے پیکر پگھل گئے
مُٹھی میں آ نہ پائے کہ جگنوں نِکل گئے

پھیلے ہُوئے تھے جاگتی نیندوں کے سِلسلے
آنکھیں کھلیں تو رات کے منظر بدل گئے

کب حدّتِ گلاب پہ حرف آنے پائے گا
تِتلی کے پَر اُڑان کی گرمی سے جل گئے

آگے تو صرف ریت کے دریا دکھائی دیں
کن بستیوں کی سمت مسافر نکل گئے

پھر چاندنی کے دام میں آنے کو تھے گلاب
صد شکر نیند کھونے سے پہلے سنبھل گئے

خواب مزدور ہے /rafiq sandeelvi

Verses

خواب مزدور ہے
رات دن سر پہ بھاری تغًاری لئے
سانس کی
بانس کی
ہانپتی کانپتی سیڑھیوں پر
اُترتا ہے
چڑھتا ہے
رُوپوش ِمعمارکے حکم پر
ایک لا شکل نقشے پہ اُٹھتی ہوئی
اوپر اٹھتی ہوئی
گول دیوار کے
خِست در خِست چکر میں محصور ہے
خواب مزدور ہے

ایک مُشقت زدہ آدمی کی طرح
میں حقیقت میں یا خواب میں
روز معمول کے کام کرتا ہوں
کچھ دیر آرام کرتا ہوں
کانٹوں بھری کھاٹ میں
پیاس کے جام پیتا ہوں
اور سوزن ِ ہجر سے
اپنی ادھڑی ہوئی تن کی پوشاک سیتا ہوں
جیتا ہوں
کیسی انوکھی حقیقت ہے
کیسا عجب خواب ہے
ایک مشقت زدہ آدمی کی طرح
اپنے حصے کی بجری اٹھانے پہ مامور ہے
خواب مزدور ہے
رفیق سندیلوی

Yeh Khushi Ki Mehafil

na jaane kyu na jaane kyu
ye khushi ki mehafil dhadakta hai dil na jaane kyon
in hazaaron mein sanam tumhi ko diya dil na jaane kyon
tumhein chaah ke mere haseen kuch aur phir chaaha nahi
haal ye hua jaane kyon
ye khushi ki mehafil ...

ji mein jo aaye karo itna magar dekh lo
haathon mein hai jo haath vahi armaan ka qaatil na ho
haay alla teri nazar zakhmi hai mera jigar
qaatil dil ke mere kahi tu hi mera dil na ho
ho tera shabaab khilata rahe jaadu tera chalta rahe
hain dua meri jaane kyon
in hazaaron mein ...

کیوں محبت پاگل کر دیتی ہے؟

Verses

اک بات سمجھ نہیں آتی
کیوں محبت پاگل کر دیتی ہے؟
کیوں آنکھوں میں بس
ایک ہی چہرہ رہتا ہے؟
کیوں دل میں بس
ایک ہی صورت بستی ہے؟
کیوں اسکی یاد اچانک
سوچوں کو جنگل کر دیتی ہے؟
اک بات سمجھ نہیں آتی
کیوں محبت پاگل کر دیتی ہے؟
کیوں کچھ نہ ہونے کا
ہر پل احساس رہتا ہے؟
کیوں بہت دور ہوتا ہے کوئی مگرپھر بھی
دل کے آس پاس رہتا ہے؟
کیوں میری ہر بات ادھوری رہتی ہے؟
کیوں وہ ہر بات مکمل کر دیتی ہے؟
اک بات سمجھ نہیں آتی
کیوں محبت پاگل کر دیتی ہے؟
کیوں من اسکی باتوں پہ
امید کا اک جہاں بساتا ہے؟
کیوں دل کے خالی کینوس پر
تصویر اسکی بناتا ہے؟
وہ میرا نہیں ہے‘ وہ میرا نہیں ہے
کیوں دماغ کی اس تکرار کو
دل کی آنکھ اوجھل کر دیتی ہے؟
اک بات سمجھ نہیں آتی
کیوں محبت پاگل کر دیتی ہے؟

O Gore-gore Chaand Se Mukh Par

o gore gore chaand se mukh par kaali kaali aankhein hain
dekhake jinako nind ud jaaye vo matavaali aankhein hain

usha ! axamya !!

matavaale nainon vaale ke main vaari vaari jaauun
matavaale nainon vaale, matavaale nainon vaale ke main
vaari vaari jaauun, ho main vaari vaari jaauun
ho main vaari vaari jaauun
matavaale nainon vaale

Mere Bas Ki Baat Jo Hoti

mere bas ki baat jo hoti
main badali ban jaati

badali ban kar naach dikhaati
nile nile ambar par
kabhi barasati kheton par
kabhi barasati mandar par
bundein banakar barakhaawaali
badali mein chhan jaati
mere bas ki

suukhe ped ire kar deti
motiyon se jangal bhar deti
kadi dhuup mein chaadar banakar
duniyaaapar tan jaati
mere bas ki

Yaadon Ki Baaraat Chali Hai

yaadon ki baaraat chali hai
aa bhi jaao raat chali hai

zabt ka daaman chhuta aise
aankhon se barasaat chali hai

kahate hain phir laut na aana
kuchh to aage baat chali hai

wo jis raste se bhi guzare
saari duniya saath chali hai

kaash wo aur abhi ruk jaayein
baat adhuuri raat chali hai

Theme by Danetsoft and Danang Probo Sayekti inspired by Maksimer