بات ساقی کی نہ ٹالی جائے گی !

Verses

بات ساقی کی نہ ٹالی جائے گی !
کر کے توبہ توڑ ڈالی جائے گی

دیکھ لینا وہ نہ خالی جائے گی !
آہ جو دل سے نکالی جائے گی

گر یہی طرزِ فغاں ہے عندلیب ! !
تُو بھی گلشن سے نکالی جائے گی

آتے آتے آئے گا اُن کو خیال ! !
جاتے جاتے بے خیالی جائے گی

کیوں نہیں ملتی گلے سے تیغِ ناز ! !
عید کیا اب کے بھی خالی جائے گی

Theme by Danetsoft and Danang Probo Sayekti inspired by Maksimer