Verses

عشق میں جان سے گذرتے ہیں گذرنے والے
موت کی راہ نہیں دیکھتے مرنے والے

آخری وقت بھی پورا نہ کیا وعدہءِ وصل
آپ آتے ہی رہے، مر گئے مرنے والے

اُٹھے اور کوچہءِ محبوب میں پہنچے عاشق
یہ مسافر نہیں راستے میں ٹھہرنے والے

جان دینے کا کہا میں نے تو ہنس کر بولے
تم سلامت رہو ہر روز کے مرنے والے

آسمان پہ جو ستارے نظر آئے امیر
یاد آئے مجھے داغ اپنے اُبھرنے والے

Author
Topics

Theme by Danetsoft and Danang Probo Sayekti inspired by Maksimer