عجب حادثہ

Verses

عجب حادثہ
---------------
حوادث کی بھیڑ میں،
اس اجڑے گلستاں میں، کبھی کلیاں نو بہار تھیں
لیکن اب کے ساون اور برکھا کی ہواوں نے کچھ ایسا اثر دکھایا
کہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کھلکھلاتے گلستان گلاب کی سرخ پتیاں ،
زمیں پہ بکھری لاشوں کے مصداق ،
خونی مناظر کی طرح،
باغ کے مالی کو پیغام دے رہی ہیں
کہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تیز ہوائیں جھنجھوڑ دیتی ہیں اور اکثر کایا پلٹ کہ رکھ دیتی ہیں ،
لیکن ہماری ان مذکورہ سرخ پتیوں کا رس ،
اسی خمیر میں شہیدان وطن کی طرح جذب ہو کر رہ جائے گا،
اور
امید واثق ہے کہ ساون کہ اس کہر آلود اور برکھا کی شدت کی ہواوں کے بعد،
اس گلشن میں جو نئے گلاب کھلیں گے ان کے عرق میں ہماری لال پتیوں کا رس ہو گا،
اور اب کے بہار جو پھول کھلیں گے وہ زیادہ جاذب نظر ہوں گے،

شکیل چوھان آزادکشمیر