Verses

خواب کے گاؤں میں پَلے ہیں ہم
پانی چَھلنی میں لے چلے ہیں ہم

چھاچھ پھونکیں کہ اپنے بچپن میں
دودھ سے کِس طرح جَلے ہیں ہم

خود ہیں اپنے سفر کی دشواری
اپنے پَیروں کے آبلے ہیں ہم

تُو تو مَت کہہ ہمیں بُرا دُنیا
تُو نے ڈھالا ہے اور ڈَھلے ہیں ہم

کیوں ہیں کب تک ہیں کس کی خاطر ہیں
بڑے سنجیدہ مسئلے ہیں ہم

Author

Theme by Danetsoft and Danang Probo Sayekti inspired by Maksimer